Tuesday, July 23, 2024
پاکستانجی بی میں لینڈ سلائیڈنگ کے باعث شاہراہ قراقرم پر ٹریفک کل...

جی بی میں لینڈ سلائیڈنگ کے باعث شاہراہ قراقرم پر ٹریفک کل تک معطل رہے گی

جی بی میں لینڈ سلائیڈنگ کے باعث شاہراہ قراقرم پر ٹریفک کل تک معطل رہے گی

اردو انٹرنیشنل (مانیٹرنگ ڈیسک) میڈیا رپورٹس کے مطابق گلگت بلتستان حکومت نے جمعرات کو کہا ہے کہ قراقرم ہائی وے (KKH) پر ٹریفک جمعہ (کل) تک معطل رہے گی جب کہ ایک روز قبل شدید برف باری اور بارش کی وجہ سے لینڈ سلائیڈنگ کی وجہ سے اسے دوبارہ بند کردیا گیا تھا۔

بدھ کے روز اعلان کردہ بندشوں نے ہفتے کے شروع میں ہلکی ٹریفک کی بحالی کے مختصر ادوار کے بعد کیا تھا، جس سے رہائشیوں اور سیاحوں دونوں کو سرد موسم کی وجہ سے درپیش چیلنجوں میں اضافہ ہوا تھا۔

جی بی کے وزیر اعلیٰ حاجی گلبر خان کے ترجمان فیض اللہ فراق کی جانب سے جاری بیان کے مطابق کے کے ایچ کو لینڈ سلائیڈنگ کی وجہ سے بند کر دیا گیا تھا اور اسے ٹریفک کے لیے کلیئر کرنے میں دو دن درکار تھے۔

بیان میں مذید کہا گیا ہے کہ KKH 22 سے 23 فروری تک تمام چھوٹی اور بڑی گاڑیوں کے لیے بند ہے لہذا زحمت کے لیے معذرت خواہ ہیں ۔ اسی طرح کے بیانات گلگت ڈویژن کے اسسٹنٹ کمشنر عادل علی اور دیامر کے ڈپٹی کمشنر نے بھی جاری کیے تھے۔

سڑکوں کی بندش نے لوگوں کو درپیش مشکلات کو اور بڑھا دیا ہے کیونکہ علاقے میں ایندھن کی فراہمی متاثر ہوئی ہے اور تازہ پیداوار کی قیمت بڑھ گئی ہے۔ کے کے ایچ کے مختلف مقامات پر درجنوں کاریں بھی پھنسی ہوئی ہیں۔

گلگت بلتستان کے وزیراعلیٰ کے ترجمان فراق نے بتایا کہ بلتستان روڈ، گلگت چترال روڈ اور استور روڈ کو ٹریفک کے لیے کھول دیا گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ KKH کو ایک روز قبل چھوٹی گاڑیوں کے لیے دوبارہ کھول دیا گیا تھا لیکن مزید لینڈ سلائیڈنگ کی وجہ سے دوبارہ ٹریفک کے لیے بند کر دیا گیا تھا۔

ترجمان نے کہا کہ مرکزی شریان کو 23 فروری کو مکمل صفائی کے بعد ٹریفک کے لیے کھول دیا جائے گا۔ فراق نے مزید کہا کہ پھنسے ہوئے مسافروں اور سیاحوں کو چھوٹی گاڑیوں کے ذریعے ان کے متعلقہ مقامات پر پہنچا دیا گیا ہے۔

اس ہفتے کے شروع میں، وقفے وقفے سے ہونے والی بارش اور برف باری نے کئی مقامات پر کے کے ایچ اور بلتستان روڈ سمیت جی بی کی بڑی سڑکیں بلاک کر دیں۔

منگل کو کے کے ایچ کو جزوی طور پر ٹریفک کے لیے کھول دیا گیا جبکہ بلتستان روڈ مسلسل تیسرے روز بھی بند رہی۔ بلتستان روڈ بند ہونے سے جی بی بھر کے ہزاروں افراد متعدد مقامات پر پھنسے ہوئے ہیں۔

خیبرپختونخوا کے شانگلہ، کوہستان اور بٹگرام میں بھی موسلادھار بارش کے باعث رابطہ سڑکیں بند ہوگئیں، لینڈ سلائیڈنگ سے متعدد گاڑیوں کو بھی نقصان پہنچا۔

تاہم اگلے روز بارش کے باعث لینڈ سلائیڈنگ کے باعث کے کے ایچ اور بلتستان روڈ کو دوبارہ بند کر دیا گیا۔ جہاں بھاری مشینری کا استعمال کرتے ہوئے کلیئرنس آپریشن جاری تھا، بلتستان روڈ مسلسل چوتھے روز بند رہی۔

اسلام آباد، سکردو اور گلگت کے درمیان فضائی رابطہ تیسرے روز بھی متاثر رہا۔ علاقے کے بالائی علاقوں میں لوگ سردی کی لپیٹ میں تھے اور انہیں بجلی کی بندش اور مواصلاتی خلل کا سامنا کرنا پڑا۔

اس سے قبل حکام نے اطلاع دی تھی کہ زیریں علاقوں میں بارش اور بالائی علاقوں میں پیر کی صبح سے برف باری شروع ہوئی اور شام تک جاری رہی۔

طویل خشک موسم کے بعد جی بی میں برف باری اور بارش شروع ہو گئی ہے۔ جی بی حکومت نے 19 سے 27 فروری تک موسلادھار بارش اور برفباری کی پیش گوئی کرتے ہوئے موسم کا الرٹ جاری کیا تھا۔ ڈپٹی کمشنرز نے بھی محکموں کو ہنگامی صورتحال کے لیے الرٹ رہنے کی ہدایت کی ہے۔

دیگر خبریں

Trending

I have been imprisoned in a cage like a terrorist, claims Imran Khan

مجھے ایک دہشت گرد کی طرح جیل میں قید...

0
مجھے ایک دہشت گرد کی طرح جیل میں قید کیا گیا ہے،عمران خان کا دعویٰ اردو انٹرنیشنل‌(مانیٹرنگ ڈیسک)برطانیہ کی اشاعت دی سنڈے ٹائمز...