Friday, June 21, 2024
انڈیابھارتی عدالت نے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کی توثیق کر...

بھارتی عدالت نے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کی توثیق کر دی

بھارت (اردو انٹرمیشنل )بھارتی سپریم کورٹ نے ریجن میں 30 ستمبر 2024 تک بلدیاتی انتخابات کرانے کا حکم دیا ہے۔بھارتی سپریم کورٹ نے ریاست جموں و کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے حکومتی فیصلے کو برقرار رکھا ہے۔

پاکستان کا ردعمل

دوسری جانب پاکستان نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت سے متعلق درخواستوں پر بھارتی سپریم کورٹ کا فیصلہ مسترد کر دیا۔نگران وزیر خارجہ جلیل عباس جیلانی کا اسلام آباد میں پریس کرتے ہوئے کہنا تھا مقبوضہ کشمیر بین الاقوامی طور پر تسلیم شدہ ایک متنازع علاقہ ہے لہذا بھارت کو مقبوضہ کشمیر کے متنازع علاقے کے تعین کا کوئی حق نہیں ہے۔

اس سے قبل انہوں نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ “ایکس ” پر لکھا کہ بین الاقوامی قانون 5 اگست 2019 کے بھارت کے یکطرفہ اور غیر قانونی اقدامات کو تسلیم نہیں کرتا۔ بھارتی سپریم کورٹ کی طرف سے عدالتی توثیق کی کوئی قانونی اہمیت نہیں ہے۔

ناقدین کا موقف

بھارتی سپریم کورٹ کے اس فیصلے کو ناقدین حکمراں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی طرف سے بھارت کے واحد مسلم اکثریتی علاقے پر قابو پانے کے لیے ایک اور قدم کے طور پر دیکھ رہے ہیں۔

بھارتی وزیر اعظم نریند مودی پر امید

اس فیصلے کے بعد، بھارتی وزیر اعظم نریند مودی نے اسے “امید کی کرن، روشن مستقبل کا وعدہ” قرار دیا اور کہا کہ “یہ جموں، کشمیر اور لداخ میں ہماری بہنوں اور بھائیوں کے لیے امید، ترقی اور اتحاد کا ایک شاندار اعلان ہے،” ہندوستانی وزیر اعظم نے یہ بات سماجی رابطے کی ویب سائٹ X سابقہ ٹیوٹر پر پوسٹ کرتے ہوئے کیا۔

کشمیر کی سیاسی جماعتیں میں مایوسی

جب کہ کشمیر کی سیاسی جماعتیں جنہوں نے منسوخی کی مخالفت کی تھی، اور ان میں شامل تھے جو عدالت گئے تھے، مایوسی کا اظہار کیا۔

عمر عبداللہ، سابق وزیر اعلیٰ اور جموں و کشمیر نیشنل کانفرنس پارٹی کے نائب صدر نے X پر پوسٹ کیا۔ انہوں نے لکھا کہ جدوجہد جاری رہے گی۔ بی جے پی کو یہاں تک پہنچنے میں کئی دہائیاں لگیں۔ ہم طویل سفر کے لیے بھی تیار ہیں۔

ایک اور سابق وزیر اعلیٰ اور جموں و کشمیر پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کی صدر محبوبہ مفتی نے کہا کہ “جموں و کشمیر کے لوگ امید کھونے یا ہارنے والے نہیں ہیں۔ عزت اور وقار کے لیے ہماری لڑائی جاری رہے گی۔ یہ ہمارے لیے سڑک کا اختتام نہیں ہے،‘‘ یہ بات بھی انہوں نے X پر پوسٹ کی.

سابق وزیر اعظم شہباز شریف کا ردعمل

سابق وزیر اعظم شہباز شریف نے “ایکس اس فیصلے پر رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ بھارتی سپریم کورٹ نےاقوام متحدہ کی قراردادوں کے منافی فیصلہ دیکر عالمی قوانین کی خلاف ورزی کی ہے۔ بھارتی سپریم کورٹ نے لاکھوں کشمیریوں کی قربانی سے غداری کی ہے۔

دیگر خبریں

Trending

India's race for cobalt will begin in disputed sea waters, China fears

متنازعہ سمندری پانیوں میں کوبالٹ کی ہندوستانی دوڑ شروع ہو جائے...

0
متنازعہ سمندری پانیوں میں کوبالٹ کی ہندوستانی دوڑ شروع ہو جائے گی،چین کو خدشہ اردو انٹرنیشنل‌(مانیٹرنگ ڈیسک) عالمی‌خبر رساں ادارے "الجزیرہ " کے مطابق ...